انتہائی افسو سنا ک خبر 230افراد جا ں بحق

عراق سرحدی علاقوں میں 7.3 شدت کا زلزلہ، 230 سے زائد جاں بحق سڑکیں متاثر ہونے اور لینڈ سلائیڈنگ کی وجہ سے ریسکیو کاموں میں مشکلات کا سامنا ہے—۔ ایران اور عراق کے سرحدی علاقوں میں7.3 شدت کے زلزلے نے تباہی مچادی،

جس کے نتیجے میں اب تک 230 سے زائد افراد جاں بحق اور سیکڑوں زخمی ہوچکے ہیں جبکہ ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ظاہر کیا جارہا ہے۔ خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق شدید آفٹرشاکس کی وجہ سے سرحدی علاقے میں خوف و ہراس برقرار ہے۔ امریکی جیولوجیکل سروے (یو ایس جی ایس) کے مطابق زلزلے کا مرکز عراق کے کردستان ریجن کے علاقے حلبجہ کے جنوب مغرب میں تھا، جس کی زیر زمین گہرائی تقریباً 30 کلومیٹر تھی۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق زلزلے کے جھٹکے مشرق وسطیٰ کے کئی ممالک کویت، بحرین، قطر، سعودی عرب ،اردن ، لبنان اور اسرائیل میں بھی محسوس کیے گئے۔گزشتہ رات آنے والے زلزلے کے نتیجے میں سب سے زیادہ نقصان ایران کے صوبے کرمان شاہ میں ہوا۔ ایرانی حکومت کے کرائسس یونٹ کے نائب سربراہ بہنام سید نے سرکاری ٹی وی کو بتایا کہ زلزلے کے نتیجے میں 230 افراد جاں بحق جبکہ 17 سو افراد زخمی ہوئے۔دوسری جانب عراق کے کردستان ریجن میں 6 افراد کی ہلاکت اور 150 کے زخمی ہونے کی اطلاعات موصول ہوئیں۔عراق کے شہر سلیمانیہ سے 75 کلومیٹر کے فاصلے پر واقع علاقے دربندیخان میں زلزلے کے نتیجے میں کافی تباہی ہوئی اور متعدد عمارتیں زمین بوس ہوگئیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں