نوازشریف ملک میں کیا کرنے جارہے ہیں؟ آئندہ 78گھنٹےانتہائی اہم

معروف عالمی مصالحت کار فیصل محمد کا اپنے بیان میں کہنا ہے کہ گزشتہ دنوں وزیراعظم شاہد خاقان عباسی لاہور میں سابق وزیراعظم میاں نوازشریف سے ملنے کےلئے پہنچنے لیکن سابق وزیراعظم نے ان سے ملنےسے انکار کردیا تھا ۔

جبکہ وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہبازشریف نے شاہد خاقان عباسی سے ملاقات ہوئی ۔ ، نواز شریف نے توپہلے کسی بھی قسم کی مشاورت سے انکار کردیا تھا تاہم بعدازاںسپیکرقومی اسمبلی سردار ایاز صادق کے گھر متعدد لیگی رہنمائوں کی ملاقات ہوئی ۔ شاہد خاقان عباسی اور شہب از شریف اولڈ ائیر پورٹ پر ملے۔معروف عالمی مصالحت کار فیصل محمد کا پاکستانی سیاست کے حوالے سے مزید کہنا تھا جب تک برطانیہ سے رابطہ کا چیپٹر بند نہیں ہوگا

اس وقت تک کراچی میں مہاجر کمیونٹی کو سکون میسر نہیں آئے گا کیونکہ ایم کیوایم برطانیہ کے ذریعے ہی پاکستان کے کاروباری مرکز کراچی کو ہٹ کرنا عالمی ایجنڈہ ہے ۔پاکستان میں نیو کلیئر اثاثہ جات کا پتہ چلانے کیلے بلیک واٹر کو ویزے مشرف نے نہیں دیئے بلکہ زرداری نےاوررا ایجنٹوں کو ویزے نوازشریف نے دیئے پاکستان کے طویل علاقے پر افغانوں کا حق اچکزئی نے مانا جبکہ بھارتی خفیہ ایجنسی کا سہولت کار الطاف پاک فوج دشمنی میں ملک میں انارکی پھیلا رہا ہے ،ان کا مزید کہنا تھا کہ نوازشریف اداروں کے خلاف بڑی مہم چلانے جارہے ہیں تاکہ حالات خراب کرکے ان کے خلاف چلنے والے بدعنوانی مقدمات پر اثر انداز ہوسکیں مگر ایسا کچھ نہیں ہوگا’’ اگلے 96 گھنٹے اس حوالے سے اہمیت کے حامل ہونگے‘‘

اپنا تبصرہ بھیجیں