حکومت نے میرٹ کی ٹانگیں توڑ ڈالیں

پنجاب حکومت نے میرٹ کی دھجیاں بکھیرتے ہوئے ایہم تقرریوں میں قابلیت اور تجربے کو نظر انداز کرنا شروع کر دیا ہے۔ نشتر میڈیکل یونیورسٹی کے وائس چانسلر کی تعیناتی میں تمام قواعد و ضوابط کو بالائے طاق رکھ دیا گیا ہے۔

نجی ٹی وی چینل 92نیوز کی رپورٹ کے مطابق نشتر میڈیکل یونیورسٹی میں وائس چانسلر کے عہدے پر پروفیسر ظفر تنویر کو تعینات کر دیا گیا ہے ۔ جبکہ موصوف نے پی ایچ ڈی کی ڈگری بھی حاصل نہیں کی ۔ اسی طرح انھوں نے تقرری کےلئے دیے گئے ٹیسٹ میں صرف 28.7فیصد نمبر حاصل کیے ہیں اور وہ انٹرویو میں بھی اس اہم عہدے پر تقرری کےلئے مطلوبہ معیار پر پورا نہیں اترسکے۔ دوسری جانب پروفیسر میجر (ر) عبدالخالق جو پی ایچ ڈی ہیں اور ٹیسٹ میں بھی انھوں نے 37.65فیصد نمبر حاصل کرکے فہرست میں اول نمبر حاصل کیا، کو تقرری میں نظر انداز کر دیا گیا ۔ پنجاب حکومت کے اس اقدام کو اقربا پروری اور میرٹ دشمنی کی بد ترین مثال قرار دیا جا رہا ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں